Hazrat Abu Bakkar Aur Hazrat Umar RA Ka Muqabla | Molana Tariq Jameel Latest Bayan 09-10-2019


0
Hazrat Abu Bakkar Aur Hazrat Umar RA Ka Muqabla | Molana Tariq Jameel Latest Bayan 09-10-2019



Hazrat Abu Bakkar Aur Hazrat Umar RA Ka Muqabla | Molana Tariq Jameel Latest Bayan 09-10-2019

This is The Official YouTube Channel of Tariq Jamil, commonly referred to as Molana Tariq Jameel, is a Pakistani religious and Islamic scholar, preacher, and public speaker.

OFFICIAL LINKS:
http://Facebook.com/TariqJamilOfficial
http://Facebook.com/AlHasanainOfficial
http://YouTube.com/TariqJamilOfficial
http://Instagram.com/TariqJamilOfficial
http://Twitter.com/TariqJamilOFCL
http://www.TariqJamilOfficial.com
http://www.alh.com.pk

source


Like it? Share with your friends!

0

What's Your Reaction?

hate hate
0
hate
confused confused
0
confused
fail fail
0
fail
fun fun
0
fun
geeky geeky
0
geeky
love love
0
love
lol lol
0
lol
omg omg
0
omg
win win
0
win

37 Comments

Your email address will not be published. Required fields are marked *

  1. اسلام زندہ آباد
    ہم نبیﷺ کے غلام ہیں
    ہم نبی ﷺکے غلاموں کے بہی غلام ہیں
    مولانا اللہ آپکی نیکیوں میں اضافہ فرماۓاللہ آپ کو خوش رکہے
    اللہ آپ کو آباد رکہے ،،آمین،،

  2. अल्लाह पाक से दुवा कर दे तबली दिन के लिये झूठ को मिटाने का ताकत दे सचाई को जिन्दा करने की हिमत और अलाह पाक से हमारे लिये दुवा करदे उममे अदीबा आमीन

  3. Hz,abo bkr, hz,omer,rz, dono me se koi km nhi thaa, hr maamly me brabr they, aor Jung e ohad aor Jung e khaiber me kafiron se maar kha k ek saat nabi paak ko shor k bhaagy they, haan, hz,usman rz, bhi bhaagy they,

  4. مولانا طارق جمیل صاحب دامت برکاتہم پرانے زمانے کا ایک قیمتی ھیرا ھے جو اس دور میں پیدا ہوئے ہیں… اللہ تعالیٰ انکو لمبی عمر عطا فرمائے آمین

  5. سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ سبحان اللہ

  6. سنن ابن ماجہ
    کتاب: مساجد اور جماعت کا بیان
    جلد اول – باب: گھروں میں مساجد
    حدیث نمبر: 754

    حدیث نمبر 754 حَدَّثَنَا أَبُو مَرْوَانَ مُحَمَّدُ بْنُ عُثْمَانَ الْعُثْمَانِيُّ، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ سَعْدٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ شِهَابٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مَحْمُودِ بْنِ الرَّبِيعِ الْأَنْصَارِيِّ، ‏‏‏‏‏‏وَكَانَ قَدْ عَقَلَ مَجَّةً مَجَّهَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ مِنْ دَلْوٍ فِي بِئْرٍ لَهُمْ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عِتْبَانَ بْنِ مَالِكٍ السَّالِمِيِّ، ‏‏‏‏‏‏وَكَانَ إِمَامَ قَوْمِهِ بَنِي سَالِمٍ، ‏‏‏‏‏‏وَكَانَ شَهِدَ بَدْرًا مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ جِئْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَقُلْتُ‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏إِنِّي قَدْ أَنْكَرْتُ مِنْ بَصَرِي وَإِنَّ السَّيْلَ يَأْتِي فَيَحُولُ بَيْنِي وَبَيْنَ مَسْجِدِ قَوْمِي، ‏‏‏‏‏‏وَيَشُقُّ عَلَيَّ اجْتِيَازُهُ، ‏‏‏‏‏‏فَإِنْ رَأَيْتَ أَنْ تَأْتِيَنِي فَتُصَلِّيَ فِي بَيْتِي مَكَانًا أَتَّخِذُهُ مُصَلًّى فَافْعَلْ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ‏‏‏‏ أَفْعَلُ، ‏‏‏‏‏‏فَغَدَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَأَبُو بَكْرٍ بَعْدَ مَا اشْتَدَّ النَّهَارُ، ‏‏‏‏‏‏وَاسْتَأْذَنَ فَأَذِنْتُ لَهُ، ‏‏‏‏‏‏وَلَمْ يَجْلِسْ حَتَّى قَالَ‏‏‏‏ أَيْنَ تُحِبُّ أَنْ أُصَلِّيَ لَكَ مِنْ بَيْتِكَ؟فَأَشَرْتُ لَهُ إِلَى الْمَكَانِ الَّذِي أُحِبُّ أَنْ أُصَلِّيَ فِيهِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَامَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَصَفَفْنَا خَلْفَهُ، ‏‏‏‏‏‏فَصَلَّى بِنَا رَكْعَتَيْنِ ثُمَّ احْتَبَسْتُهُ عَلَى خَزِيرَةٍ تُصْنَعُ لَهُمْ.

    محمود بن ربیع انصاری (رض) سے روایت ہے اور ان کو وہ کلی یاد تھی جو رسول اللہ ﷺ نے ڈول سے لے کر ان کے کنویں میں کردی تھی، انہوں نے عتبان بن مالک سالمی (رض) سے روایت کی (جو اپنی قوم بنی سالم کے امام تھے اور غزوہ بدر میں رسول اللہ ﷺ کے ساتھ شریک ہوئے تھے) وہ کہتے ہیں میں رسول اللہ ﷺ کے پاس آیا، اور عرض کیا اللہ کے رسول ! میری نظر کمزور ہوگئی ہے، جب سیلاب آتا ہے تو وہ میرے اور میری قوم کی مسجد کے درمیان حائل ہوجاتا ہے، اسے پار کرنا میرے لیے دشوار ہوتا ہے، اگر آپ مناسب سمجھیں تو میرے گھر تشریف لائیں اور گھر کے کسی حصے میں نماز پڑھ دیں، تاکہ میں اس کو اپنے لیے مصلیٰ (نماز کی جگہ) بنا لوں، آپ ﷺ نے فرمایا ٹھیک ہے، میں ایسا کروں گا ، اگلے روز جب دن خوب چڑھ گیا تو نبی اکرم ﷺ اور ابوبکر (رض) آئے، اور اندر آنے کی اجازت طلب کی، میں نے اجازت دی، آپ ﷺ ابھی بیٹھے بھی نہ تھے کہ فرمایا تم اپنے گھر کے کس حصہ کو پسند کرتے ہو کہ میں تمہارے لیے وہاں نماز پڑھ دوں ؟ ، میں جہاں نماز پڑھنا چاہتا تھا ادھر میں نے اشارہ کیا، رسول اللہ ﷺ کھڑے ہوئے، ہم نے آپ کے پیچھے صف بندی کی، آپ ﷺ نے ہمیں دو رکعت نماز پڑھائی، پھر میں نے آپ کو خزیرہ (حلیم) ١ ؎ تناول کرنے کے لیے روک لیا جو ان لوگوں کے لیے تیار کیا جا رہا تھا ٢ ؎۔

    تخریج دارالدعوہ صحیح البخاری/الصلاة ٤٥ (٢٢٤) ، ٤٦ (٢٢٥) ، الأذان ٤٠ (٦٦٧) ، ٥٠ (٦٨٦) ، ١٥٤ (٨٣٩) ، التہجد ٣٦ (١١٨٥) ، الأطعمة ١٥ (٥٢٠١) ، صحیح مسلم/المساجد ٤٧ (٣٣) ، سنن النسائی/الإمامة ١٠ (٧٨٩) ، ٤٦ (٨٤٥) ، السھو ٧٣ (١٣٢٨) ، (تحفة الأشراف ٩٧٥٠، ١١٢٣٥) ، وقد أخرجہ موطا امام مالک/ قصر الصلاة ٢٤ (٨٦) ، مسند احمد (٤/٤٤، ٥/٤٤٩) (صحیح ) وضاحت ١ ؎ خزیرہ یہ ایک قسم کا کھانا ہے جو گوشت کے چھوٹے چھوٹے ٹکڑے کاٹ کر آٹا ڈال کر پکایا جاتا ہے، موجودہ دور میں یہ حلیم کے نام سے مشہور ہے۔ ٢ ؎ اس حدیث سے بہت سی باتیں نکلتی ہیں، گھر میں مسجد بنانا، چاشت کی نماز جماعت ادا کرنا، نابینا کے لئے جماعت سے معافی، غیر کے گھر میں جانے سے پہلے اجازت لینا، نفل نماز جماعت سے جائز ہونا وغیرہ وغیرہ۔

    Mahmud bin Rabi Al- Ansari, who remembered that the Messenger of Allah (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) spat a mouthful of water from a bucket into a well that belonged to them, narrated that Itban bin Malik As-Salimi who was the chief of his people Banu Salim and had participated in (the battle of) Badr with the Messenger of Allah (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) said "I came to the Messenger of Allah (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) and said O Messenger of Allah, my sight is failing and the flood comes and prevents me from reaching the Masjid of my people, and it is too hard for me to cross the water. Do you think you could come and perform prayer in my house in a place which I can then take as a place for prayer? He said I will do that. The following day, the Messenger of Allah (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) and Abu Bakr (RA) came, when the heat of the day had grown intense. He asked permission to enter, and I gave him permission. He did not sit down until he said Where would you like me to perform prayer for you in your house? I showed him the place where wanted him to pray, so the Messenger of Allah (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) stood and we lined up behind him, and he led us in praying two Rakah (units). Then I asked him to stay and eat some Kh…… that had been prepared for them. (Sahih)

Choose A Format
Personality quiz
Series of questions that intends to reveal something about the personality
Trivia quiz
Series of questions with right and wrong answers that intends to check knowledge
Poll
Voting to make decisions or determine opinions
Story
Formatted Text with Embeds and Visuals
List
The Classic Internet Listicles
Countdown
The Classic Internet Countdowns
Open List
Submit your own item and vote up for the best submission
Ranked List
Upvote or downvote to decide the best list item
Meme
Upload your own images to make custom memes
Video
Youtube, Vimeo or Vine Embeds
Audio
Soundcloud or Mixcloud Embeds
Image
Photo or GIF
Gif
GIF format